تلنگانہ

تلنگانہ میں 6 ایئرپورٹس کے قیام کے لئے مناسب اقدامات کرنے چیف منسٹر کو مرکزی وزیر کا تیقن

حیدرآباد _ مرکزی وزیر برائے شہری ہوا بازی شری جیوترآدتیہ سندھیا نے اندرون ملک ریاست تلنگانہ کی بطور اقتصادی مرکز ترقی اور بیرون ممالک سے ریاست میں مسافروں کی آمد ورفت میں درج کیے جارہے روزافزوں اضافے کے پس منظر میں اس بات کا یقین دلایا کہ مرکزی حکومت حیدرآباد کے شمش آباد بین الاقوامی ہوائی اڈے کی ترقی و توسیع کے لیے مکمل تعاون فراہم کرے گی۔ مرکزی وزیر نے یہ بھی واضح کیا کہ ریاستی حکومت کی درخواست کے مطابق ریاست میں 6 نئے ہوائی اڈوں کے قیام کے لیے مناسب اقدامات کیے جائیں گے۔ مرکزی وزیر جو متعدد پروگراموں میں شرکت کیلیے شہر حیدرآباد آئے ہوئے ہیں، نے آج بروز ہفتہ یہاں پرگتی بھون میں وزیراعلیٰ جناب کے چندرشیکھر راؤ سے خیرسگالی ملاقات کی۔ وزیراعلیٰ نے مرکزی وزیر کو یہاں پرگتی بھون میں اُنکے اعزاز میں ترتیب دئے گئے ظہرانے پر مدعو کیا۔ بعد ازاں دوران گفتگو وزیراعلیٰ نے مرکزی وزیر شری سندھیا سے درخواست کی کہ چونکہ تلنگانہ ریاست اقتصادی ترقی کے محاز پر ایک مرکز کی حیثیت اختیار کرتی جارہی ہے اور یہ کہ شہر حیدرآباد تیزی سے ایک بین الاقوامی شہر بننے کی سمت میں گامزن ہے تو ایسے میں شہر حیدرآباد سے بین الاقوامی ہوائی اڈوں کے لیے کارکرد پروازوں کو مزید سہولت بخش بنایا جانا چاہئے۔ اُنہوں نے مرکزی وزیر کو بتایا کہ چونکہ شہر حیدرآباد تیزی سے آئی ٹی، صحت، سیاحت اور تجارتی مرکز بن کر اُبھر رہا ہے تو ایسے میں لوگ ملک کے دیگر مقامات سے اور کئی بین الاقوامی شہروں سے یہاں تشریف لا رہے ہیں جس کے پیش نظر شہر حیدرآباد سے جنوب مشرقی ایشیاء، یورپ اور امریکہ جیسے ممالک کے لیے راست پروازوں کی تعداد میں اضافہ ناگزیر ہے۔

وزیراعلیٰ نے مرکزی وزیر سے یہ بھی درخواست کی کہ وہ ریاست میں 6 نئے ہوائی اڈوں کے قیام اور اُن کی ترقی و نیز اُنہیں کارکرد بنانے کیلیے بعجلت ممکنہ درکار اقدامات کریں۔ وزیراعلیٰ نے مرکزی وزیر سے حیدرآباد بین الاقوامی ہوائی اڈے تک میٹرو ریل رابطے کو وسعت دینے کی بھی درخواست کی۔

وزیراعلی کی درخواست کے جواب میں مرکزی وزیر نے کہا کہ حیدرآباد بین الاقوامی ہوائی اڈے کی ترقی کیلیے مرکز کی جانب سے مکمل تعاون کیا جائے گا جیسا کہ حیدرآباد ایک بین الاقوامی شہر کے طور پر ترقی کر رہا ہے۔ شری جیوترآدتیہ سندھیا نے کہا کہ اندرون ریاست مجوزہ چھ ہوائی اڈوں میں سے ایک ورنگل کے مامونور ہوائی اڈہ کے ضمن میں فوری اقدامات کئے جائیں گے۔ اسی طرح اُنہوں نے نظام آباد ضلع کے جکرن پلّی میں مجوزہ ہوائی اڈے کیلیے درکار تکنیکی منظوری دینے کا تیقن دیا۔ وزیر موصوف نے یہ بھی کہا کہ اُن کی وزارت ایئر فورس کے تعاون سے عادل آباد میں ہوائی اڈے کے قیام کی جانچ کرتے ہوئے ہوائی اڈہ کے قیام کے عمل کی راست نگرانی کرے گی۔ مرکزی وزیر نے وزیراعلیٰ کو یقین دلایا کہ پیداپلی (بسنت نگر) اور کوتاگوڈیم کے علاوہ دیوراکدرا (محبوب نگر) میں چھوٹے طیاروں کی لینڈنگ اور ٹیک آف کے لیے پیش کردہ تجاویز کی دوبارہ جانچ کی جائے گی اور ضروری کارروائی کی جائے گی۔

اس پروگرام میں وزراء شری کے ٹی راما راؤ، شری ویمولا پرشانت ریڈی، شری محمود علی، ارکان پارلیمنٹ شری جے سنتوش کمار، شری رنجیت ریڈی، حکومتی مشیر شری راجیو شرما، چیف سکریٹری شری سومیش کمار، سی ایم پرنسپل سکریٹری شری نرسنگ راؤ، سکریٹری شریمتی سمیتا سبھروال، شری راجشیکھر ریڈی، یونین سیول ایوی ایشن سکریٹری شری پردیپ کرولا، جوائنٹ سکریٹری شری دوبے، اسپیشل سی ایس شری راماکرشنا راؤ، پرنسپل سکریٹری (ٹرانسپورٹ) شری سنیل شرما، جی ایم آر گروپ کے چیئرمین شری جی ملیکارجن راؤ اور دیگر نے شرکت کی۔

متعلقہ خبریں

Back to top button