خلاء میں بن رہی ہے دنیا کی پہلی فلم۔ہیروئن اور ڈائریکٹر خلاء میں پہنچ گئے

نئی دہلی: دنیا کی پہلی خلاء میں بنائی جانے والی فلم کے اداکار اور ہدایت کار خلاء میں پہنچ گئے۔ یہ فلم روس کے جانب سے بنائی جارہی ہے۔فلم دی چیلینج کا عملہ 12 دن کے مشن کے دوران آئی ایس ایس پر موجود رہے گا۔ اداکارہ اور ہدایت کار خلاء میں پہنچ گئے ہیں، جہاں وہ خلا میں بنائی جانے والی پہلی فلم کی شوٹنگ کریں گے۔اس موقع پر روس کے خلائی ادارے روسکوسموس نے اپنے ٹوئٹر پر پیغام دیا بین الاقوامی خلائی اسٹیشن پر خوش آمدید۔ تاریخ میں پہلی مرتبہ روس نے ایک ہدایت کار اور اداکارہ کو خلاء میں بھیجا ہے۔ اس اقدام کا مقصد مدار میں رہ کر فلم بنانا ہے۔ روس کے خلائی تحقیق کے ادارے نے اس منصوبے کو سراہتے ہوئے کہا ہے کہ اس سے روس کے خلائی پروگرام کی ساکھ کو بہتر بنانے کا موقع ملے گا۔ 36 سالہ اداکارہ جولیا پرسیلڈ اور 37 سالہ ڈائریکٹر کلم شپینکو تربیتی مراحل سے گزرنے کے بعد خلاء کا کا رخ کیا ان کی تربیت کا آغاز یکم جون سے ہوگیا تھا۔