December 13, 2018

سر تن سے جدا کرنے کا واقعہ، مقتول کی شناخت اترپردیش کے چودھری اسرار کی حیثیت سے کر لی گئی

سر تن سے جدا کرنے کا واقعہ، مقتول کی شناخت اترپردیش کے چودھری اسرار کی حیثیت سے کر لی گئی
Photo Credit To Urduleaks

نرمل 9 مارچ / ریاست تلنگانہ کے بھینسہ  میں جس شخص کا کٹا ہوا سر برآمد ہوا تھا اس کی شناخت ہوگئی ہے اور مقتول کا دھڑ نرمل میں ملا۔ تفصیلات کے مطابق مقتول کی شناخت چودھری محمد اسرار احمد سہارنپور، اترپردیش کی حیثیت سے کی گی۔ سرکل انسپکٹر نرمل ون ٹاون جان دیواکر نے بتایا کہ کٹا ہوا سر دستیاب ہونے کے بعد مقتول کے بھائی نے بھینسہ ڈی ایس پی راملو سے شکایت کی کہ مقتول ان کے بھائی تھے اورچند روز سے فون پر بات نہیں ہورہی تھی جس کی وجہ سے وہ نرمل پہنچے اور انھوں نے کٹے سرکی تصاویر دیکھ کر اپنے بھایی کو پہچان لیا۔ انھوں نے بتایا کہ انکا بھائی ایک ماہ سے نرمل میں افسر کرانا کے مکان میں کرایہ سے مقیم تھا۔ پولیس مقام واردات پر پہنچی اور مکان کے باتھ روم سے دھڑ دستیاب کیا گیا۔ سرکل انسپکٹر نے بتایا کہ مقتول کپڑ وں کا کاروبار کرتا تھا۔ اسے ایک لڑکا اور لڑکی ہے، اسرار احمد جو کپڑ وں کا کاروبار کرتا تھا اسکے ہمراہ روم میں اسکا ساتھی محمد اختر بھی رہتا تھا جو واردات کے بعد سے فرار ہے،پولیس مختلف زاویوں سے اس واقعے کی تحقیقات کر رہی ہے۔ زرایع سے پتہ چلا ہے کہ ایک بڑے وزنی پتھر سے سر پر مار کر نوجوان کو ہلاک کیا گیا بعد میں اسکے سر کو چاقو سے الگ کرکے جسم کو پٹرول ڈال کر جلادیا گیا ہے۔

Post source : Urduleaks news network