August 04, 2020

یوپی پولیس کا لوگوں کی املاک ضبط کرنا غیر جمہوری، مخالفت کی آوازوں کے خلاف سیاسی انتقام: پاپولر فرنٹ

یوپی پولیس کا لوگوں کی املاک ضبط کرنا غیر جمہوری، مخالفت کی آوازوں کے خلاف سیاسی انتقام: پاپولر فرنٹ

نئی دہلی 6 جولائی (اردولیکس)پاپولر فرنٹ آف انڈیا کے چیئرمین او ایم اے سلام نے اپنے بیان میں لوگوں کی املاک ضبط کرنے کے یوپی پولیس کے قدم کو ریاست میں سی اے اے اور این آر سی کی مخالفت میں مظاہرہ کرنے والوں کے خلاف شروع کئے گئے انتقام کا حصہ قرار دیا ہے۔ایسی خبریں آ رہی ہیں کہ یوپی پولیس نے ہائی کورٹ کی رائے کے برخلاف سی اے اے مخالف مظاہروں کے دوران توڑ پھوڑ کے نام پر لوگوں کی املاک کو ضبط کرنا شروع کر دیا ہے۔ یہ ریاست میں سیاسی مخالفین کے خلاف جاری انتقام کا حصہ ہے۔ اس قسم کی غیر جمہوری اور پر تشدد کارروائیوں سے یوگی کی پولیس ریاست میں اپوزیشن کے آخری تنکے کو بھی نیست و نابود کر دینا چاہتی ہے۔ یوگی حکومت اور پولیس نے شروع سے ہی سی اے اے و این آر سی مخالف مظاہروں میں حصہ لینے والے لوگوں کے ساتھ انتقامی انداز سے معاملہ کیا ہے، جو کہ تاناشاہی حکومتوں کا طریقہ رہا ہے۔ اس بات کے واضح شواہد پائے گئے ہیں کہ یوپی پولیس نے دائیں بازو کی ہندوتوا جماعتوں کے ساتھ ہاتھ ملایا اور بے قصور لوگوں کے غیر عدالتی قتل، تشدد اور بڑے پیمانے پر توڑ پھوڑ کو انجام دیا، جو کہ زیادہ تر مسلم محلوں میں اور مسلم پڑوسیوں کے ساتھ انجام دئیے گئے۔ جس پولیس کا کام لوگوں کی زندگیوں اور املاک کو تحفظ فراہم کرنا تھا اس نے غنڈوں کا کردار ادا کیا۔ لیکن اب تک کسی بھی افسر یا دائیں بازو کے غنڈوں کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ ہم ملک کی تمام جمہوری طاقتوں سے اپیل کرتے ہیں کہ یوگی حکومت میں مجرمانہ نظام انصاف کے انہدام کے خلاف آواز بلند کریں۔