انٹر نیشنل

پیغمبراسلامؐ کا خاکہ بنانے والے گستاخ کارٹونسٹ کی خطرناک سڑک حادثہ میں دردناک موت

نئی دہلی: پیغمبراسلامؐ کا خاکہ بنانے والے گستاخ سویڈن کے کارٹونسٹ لارس ولکس کی سڑک حادثے میں موت ہوگئی۔ ولکس کی عمر 75 سال تھی۔ یہ حادثہ اتوار کو جنوبی سویڈن کے قصبہ مارکریڈ کے قریب اس وقت پیش آیا جب وہ پولیس کی سیکورٹی میں کہیں جارہاتھا ۔ روزنامہ ڈی این نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ ولکس کے ساتھی نے اس کی موت کی تصدیق کی ہے۔

بین الاقوامی میڈیا کے مطابق یہ  حادثہ اس وقت پیش آیا جب لارس ولکس کی کار مخالف سمت سے آنے والے ٹرک سے ٹکرا گئی جس  نتیجے میں دونوں گاڑیوں میں بھیانک آگ  لگ گئی اور اس آگ میں ملعون لارس ولکس جل کر راکھ ہو گیا۔اس حادثہ میں ملعون کے ساتھ موجود دو سیکوریٹی گارڈ بھی زندہ جل گئے۔یہ دونوں گارڈ ملعون کی حفاظت کے لئے وہاں کی حکومت نے مقرر کئے تھے جب کہ ٹرک ڈرائیور زخمی ہے جسے ہاسپٹل میں شریک کردیا گیا ۔پولیس نے  کہا ہے کہ فوری طور پر حادثے کی وجہ معلوم نہیں ہو سکی۔ پولیس نے حادثے میں کسی بھی تخریب کاری کے خدشے کے مسترد کردیا ہے۔

لارس ولکس نے 2007  میں پیغمبر اسلام کے متنازعہ خاکے تیار کئے تھے جس پر دنیا بھر کے مسلمانوں نے ملعون کارٹونسٹ کے خلاف کئی دنوں تک احتجاج کیا تھا اس پر دو مرتبہ جان لیوا حملہ بھی ہوا۔ نامعلوم افراد نے ملعون کارٹونسٹ کے گھر پر سال 2010 میں حملہ کرتے ہوئے گھر کو جلا ڈالا تھا لیکن وہ اس وقت گھر میں موجود نہیں تھا اس کے بعد سال 2015 میں ڈنمارک میں ملعون کارٹونسٹ لارس ولکس نے ایک تقریب میں شرکت کی تھی اس وقت بھی اسے ہلاک کرنے کے لئے فائرنگ کی کئی لیکن وہ بچ گیا۔اور آخر کار آج ملعون کارٹونسٹ حادثہ میں زندہ جل کر راکھ ہو گیا۔سوشیل میڈیا پر ملعون کارٹونسٹ لارس ولکس کی بدترین موت پر دنیا بھر کے مسلمانوں نے اپنے مسرت کا اظہار کیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button