ہندوستان نے پاکستان، بنگلہ دیش اور میانمار کی سرحد پر 5 ہزار کلومیٹر طویل خار دار تار لگائی ہے

داخلی امور کے وزیر مملکت جناب نیشتھ پرامنک نے آج لوک سبھا میں ایک سوال کے تحریری جواب میں بتایا کہ خار دار تار بچھانے کا کام بھارت- پاکستان سرحد، بھارت- بنگلہ دیش سرحد اور ہند -میانما سرحد پر کیا جارہا ہے۔ اب تک خار دار تار بچھا کر 5187 کلو میٹر لمبی بین الاقوامی سرحد کا احاطہ کیاگیا ہے۔ بھارت –پاکستان اور ہند -بنگلہ دیش سرحد پر خار دار تار بچھانے کی تفصیل حسب ذیل ہیں۔

کلو میٹر میں

سرحد

خار دار تار کے ذریعے سرحد کا احاطہ کیاگیا

بھارتپاکستان سرحد

2041

بھارتبنگلہ دیش سرحد

3141

جعلی ہندوستانی کرنسی اور جانور یا مویشیوں کی غیر قانونی اسمگلنگ کو روکنے کے لئے حکومت نے ایک کثیر رخی طریقہ کار اپنایا ہے، جن میں 24 گھنٹے سرویلانس اور سرحدوں پر گشت شامل ہے۔ اس کے علاوہ مشاہداتی چوکی کا قیام، بی ایس ایف عملے کی تعداد میں اصافہ، سرحد پر تار بچھانے کا کام اور فلڈ لائٹ لگانا، واٹر کرافٹ کشتیوں کا استعمال اور فلوئنگ بارڈر آرٹ پوسٹ (بی اوپی) اور ہینڈ فیلڈ تھرمل ایمیجز جسے جدید تکنیکی آلات، نائٹ وژن ڈیوائس، ٹوئین ٹیلی اسکوپ، بغیر پائلٹ والی ہوائی گاڑی یعنی (یو اے وی) انٹلی جنس سیٹ اپ کی تجدید اور ریاستی سرکاروں کی متعلقہ انٹلی جینس ایجنسیوں کے ساتھ رابطہ بڑھانا بھی شامل ہے۔