نیشنل

اگنی پتھ اسکیم کو منسوخ کرنے سپریم کورٹ میں ایک اور درخواست

نئی دہلی _ 21 جون ( اردولیکس) ایک مفاد عامہ کی عرضی (PIL) سپریم کورٹ میں دائر کی گئی ہے جس میں اگنی پتھ اسکیم کے آئینی جواز کو چیلنج کیا گیا ہے جس میں نوجوانوں کو چار سال کے لیے فوج میں شامل کرنے کی تجویز ہے۔

ایڈوکیٹ ایم ایل شرما کی طرف سے دائر درخواست میں 14 جون 2022 کے نوٹیفکیشن کو منسوخ کرنے کی درخواست کی گئی ہے، جو وزارت دفاع کی طرف سے اس سکیم کا اعلان کرتے ہوئے جاری کیا گیا تھا۔

عرضی میں کہا گیا کہ اگنیور اسکیم کے مطابق، 4 سال کے بعد، منتخب امیدواروں میں سے، صرف 25 فیصد کو ہندوستانی فوج میں جاری رکھا جائے گا جبکہ باقی کو مسلح افواج میں ریٹائرڈ / ملازمت سے محروم کردیا جائے گا۔

"4 سال کے دوران انہیں تنخواہ اور پرک ادا کیا جائے گا لیکن 4 سال کے بعد انکار کرنے والے امیدوار کو پنشن وغیرہ نہیں ملے گی۔

درخواست میں کہا گیا کہ اس اسکیم کے باعث ملک بھر میں بڑے پیمانے پر احتجاج ہوا ہے۔یہ اسکیم پارلیمنٹ کی منظوری کے بغیر اور گزٹ نوٹیفکیشن کے بغیر ملک پر مسلط کی گئی ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button