نیشنل

آندھراپردیش میں ضلع کے نام کو تبدیل کرنے پر پرتشدد احتجاج _ وزیر اور رکن اسمبلی کے مکانات کو آگ لگا دی

وجے  واڑہ _ 24 مئی ،( اردولیکس) آندھراپردیش میں ایک ضلع کے نام کو تبدیل کردینے کے خلاف شروع ہونے والے عوامی احتجاج نے تشدد کا راستہ اختیار کرلیا جس میں احتجاجیوں نے ایک وزیر اور برسراقتدار جماعت کے رکن اسمبلی کی قیام گاہ کو آگ لگا دی۔ بتایا جاتا ہے کہ آندھراپردیش کی جگن موہن ریڈی حکومت نے حال میں نئے اضلاع کی تشکیل عمل میں لائی تھی جس میں ایک ضلع کوناسیما کے نام سے تشکیل دیا گیا۔بعد ازاں اس کا نام تبدیل کرتے ہوئے بی آر امبیڈکر کوناسیما رکھا گیا۔ ضلع کے نام کی تبدیلی کے خلاف مختلف مقامات پر عوامی احتجاج شروع ہوا اور آج یہ احتجاج پر تشدد ہوگیا ۔

احتجاجیوں نے کوناسیما ضلع کے املاپورم ٹاون میں  ضلع  کا نام تبدیل کرنے کے خلاف مظاہرین نے توڑ پھوڑ کی۔ اور ریاستی وزیر  وشواروپ اور میدایوارم کے رکن اسمبلی ستیش کے  گھروں کو آگ لگا دی۔ مظاہرین نے املا پورم بینک کالونی میں وزیر وشوروپ کے گھر پر پتھراؤ کیا اور اسے آگ لگا دی۔ ہزاروں مظاہرین نے وزیر وشوروپ کے گھر کو گھیر لیا، ان کی کھڑکیوں اور فرنیچر کو تباہ کر دیا۔ وزیر کے گھر کے قریب ایسکارٹ گاڑی تباہ کردی ۔ موٹر سائیکل کو بھی آگ لگا دی گئی۔ پولیس نے حملے سے قبل وزیر کے اہل خانہ کو باہر نکال لیا۔ دوسری طرف، املاپورم میں  مظاہرین نے ہاؤسنگ بورڈ کالونی میں میدیوارم کے ایم ایل اے ستیش کے گھر کو بھی آگ لگا دی۔

متعلقہ خبریں

Back to top button