نیشنل

لالو پرساد یادو کی حالت تشویشناک ۔ صحت‌کیلئے مندروں میں پوجا

نئی دہلی: راشٹریہ جنتا دل کے سربراہ لالو پرساد یادو کو کندھے اور پاوں میں چوٹ کی وجہ سے دہلی کے ایمس میں شریک کروایا گیا ہے۔ وہ پٹنہ میں اپنے گھر کی سیڑھیاں چڑھتے ہوئے گر گئے تھے جس کے بعد انہیں پٹنہ کے ایک اسپتال میں شریک کروایا گیا لیکن بہتری نہ ہونے کی وجہ سے انہیں ایئر ایمبولینس کے ذریعے پٹنہ سے دہلی منتقل کیا گیا۔

لالو یادو کے بیٹے تیجسوی یادو نے دہلی لانے کے بارے میں بتایا کہ ایمس کے ڈاکٹرس کو ان کے والد کی صحت کے تعلق سے معلومات ہیں اس لیے انہیں پٹنہ سے دہلی لایا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ لالو پرساد یادو کے جسم میں تین جگہوں پر فریکچر ہوا ہے۔ بتایا جارہا ہے کہ حالت بگڑنے کی وجہ دوائیوں کی زیادہ مقدار بتائی جارہی ہے ۔

ڈاکٹرس کا کہنا ہے کہ لالو پرساد یادو کے جسم میں آج صبح تک کسی قسم کی کوئی حرکت نہیں ہوئی۔ دوسری جانب لالو پرساد یادو کے حامی ان کی صحت یابی کے لیے پوجا کررہے ہیں۔ ان کی بہتر صحت کے لیے پٹنہ کے کئی مندروں میں ہون بھی کیا جا رہا ہے۔ اس اثناء میں ان کی شریک حیات رابڑی دیوی نے کہا کہ لالو پرساد کے چاہنے والے پریشان نہ ہوں ان کی صحت بہتر ہے۔

تیجسوی یادو کا کہنا ہے کہ پہلے ان کے والد کو گردے کی پیوند کاری کے لیے سنگاپور لے جانے کا منصوبہ تھا لیکن ان کے تازہ فریکچر کے بعد اب وہ دہلی کے ڈاکٹروں کے مشورے پر اگلا قدم اٹھائیں گے۔ اگر وہ سنگاپور جانے کی اجازت دیں گے تو ہم انہیں لے جائیں گے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button