نیشنل

اقلیتوں کو وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنایا جا رہا ہے : چنتن اجلاس سے سونیا گاندھی کا اظہار تشویش

نئی دہلی ( اردولیکس) کانگریس صدر سونیا گاندھی نے راجستھان کے ادے پور میں کانگریس کے تین روزہ   سنکلپ چنتن اجلاس کے افتتاح کے موقع وزیر اعظم نریندر مودی اور  بی جے پی قائدین  پر سخت تنقید کی ۔ انہوں نے کہا کہ مودی اور ان کے اتحادیوں نے حکومت میں پولرائزیشن کو مستقل کر دیا ہے۔ لوگ خوف اور عدم تحفظ کے احساس میں جی رہے ہیں۔ اقلیتوں کو وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنایا جا رہا ہے، جو ہمارے معاشرے کا اٹوٹ حصہ ہیں اور ملک کے مساوی شہری ہیں مودی حکومت  اقلیتوں پر ظلم کر رہی ہے اور مہاتما گاندھی کے قاتلوں کی تعریف کر رہی ہے۔

سونیا گاندھی نے کہا کہ مودی اور ان کی حکومت زیادہ سے زیادہ حکمرانی اور کم سے کم حکومت کہتی ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ تقسیم کو مستقل کر دیا گیا ہے۔ ہمارے معاشرے کی تکثیریت کو نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ سیاسی مخالفین کو ڈرایا جا رہا ہے۔ جیل میں ڈالا جا رہا ہے.

انہوں نے کہا کہ اس اجلاس نے کانگریس کو متحد کرنے کے علاوہ "بی جے پی، آر ایس ایس اور اس سے وابستہ تنظیموں کی پالیسیوں کے نتیجے میں ملک کو درپیش بے شمار چیلنجوں پر بات کرنے کا موقع فراہم کیا ہے سونیا گاندھی نے پارٹی قائدین پر زور دیا کہ وہ آپسی اختلاف کو ختم کرتے ہوئے ملک میں نفرت کی سیاست کو ختم کرنے کے لئے آگے آئیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button