تلنگانہ

تلنگانہ میں نائٹ کرفیو کی ضرورت نہیں۔عدالت میں حکومت کا موقف

حیدرآباد: تلنگانہ میں کورونا کی صورتحال اور حکومت کی جانب سے اس کی روک تھام کے لئے کئے جانے والے اقدامات کا ریاستی ہائی کورٹ نے آج جائزہ لیا۔اس معاملہ کی سماعت کے موقع پر محکمہ صحت کی جانب سے روزانہ کئے جارہے آرٹی پی سی آر،ریاپڈ ٹسٹوں پر رپورٹ پیش کی گئی۔اس مرحلہ پر عرضی گذار نے کہا کہ حکومت غلط اعداد وشمار پیش کررہی ہے۔عرضی گذارنے عدالت کے علم میں یہ بات لائی کہ ریاست بھر میں کورونا کی شدت کی وجہ سے تین دنوں کے دوران 1.70لاکھ بخارمتاثرین کی نشاندہی کی گئی ہے۔ساتھ ہی عرضی گذار کے وکیل نے کہاکہ گھر گھر فیور سروے کے دوران جو کٹس عوام کو فراہم کی جارہی ہیں، ان میں بچوں کو دی جانے والی دوائیں نہیں ہیں جس پر ایڈوکیٹ جنرل نے عدالت سے کہا کہ حکومت وقتا فوقتا کورونا کی روک تھام کے لئے اقدامات کررہی ہے۔انہوں نے کہاکہ ریاست بھر میں کورونا کی مثبت شرح 3.16فیصد ہی ہے اسی لئے ریاست میں رات کے کرفیو کے نفاذ کی ضرورت نہیں ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button