تلنگانہ

باکسنگ میں ورلڈ چمپیئن بننے کے بعد نظام آباد میں نکہت زرین کے گھر میں خوشی کا ماحول

نظام آباد _ 21 مئی ( اردولیکس) تلنگانہ کے نظام آباد شہر کی باکسنگ اسٹار نکہت زرین جو ورلڈ چمپیئن بن گئی ہیں کے گھر میں خوشی کا ماحول ہے۔ان کی والدہ پروین سلطانہ نے اس کو فخر کالمحہ قراردیااور کہا کہ اس کے اظہارکیلئے ان کے پاس الفاظ نہیں ہیں

۔وہ جونیر ورلڈ چیمپن پہلے ہی رہی تھیں تاہم اب انہوں نے سینئر س میں 5-0سے ایک طرفہ کامیابی حاصل کی ہے۔بیٹی کی کامیابی پر مسرور ان کی والدہ نے کہا کہ تلنگانہ میں خاتون باکسرس نہیں ہیں، باکسنگ کے کھیل میں نکہت کی دلچسپی پر ان کو ابتدا میں خوف ہوا کیونکہ یہ عموما لڑکوں کا کھیل ماناجاتا تھا۔نکہت کی اس میں کافی دلچسپی تھی۔ وہ لڑکوں کے ساتھ پریکٹس کرتی تھیں۔باکسنگ کے دوران بعض وقت وہ زخمی بھی ہوجایاکرتی تھیں جس کی وجہ سے وہ چاہتی تھیں کہ نکہت باکسرنہ بنے تاہم نکہت باکسنگ کی تربیت حاصل کرنے کے لئے کافی مصر تھی۔اس میں ان کے والد کا کافی تعاون رہا ہے۔

ان کے والد محمد جمیل احمد نے کہا کہ ان کو بیٹی پربھروسہ تھا۔عالمی چیمئین شپ کے فائنل مقابلہ میں سکنڈراونڈ مشکل ضرور تھاتاہم نکہت نے اس مقابلہ کو جیت کر نئی تاریخ بنائی ہے۔انہوں نے کہاکہ باکسنگ کیلئے کافی عزم کی ضرورت ہوتی ہے۔

نکہت کی پیدائش 1996میں تلنگانہ کے نظام آباد میں  ہوئی تھی۔ نکہت نے نئی اونچائیوں کو چھوتے ہوئے اپنے ملک کا نام روشن کیا ہے۔وہ یہ ثابت کرنا چاہتی تھی کہ لڑکیاں بھی لڑکوں سے کم نہیں ہیں

۔14سال کی عمر میں نکہت کو گولڈن بیسٹ باکسر قراردیاگیاتھا۔اگلے ہی سال انہوں نے ویمنس جونیر اور یوتھ ورلڈ باکسنگ چیمپین شپ میں کامیابی حاصل کی تھی۔سال 2017میں زخمی ہونے کی وجہ سے وہ ایک سال کیلئے باکسنگ سے دوررہیں۔ یہاں تک کہ وہ دولت مشترکہ کھیلوں اور ایشین گیمس سے بھی باہر رہیں تاہم نکہت نے جدوجہد جاری رکھنے کا فیصلہ کیا۔سال 2018میں انہوں نے بلگریڈ انٹرنیشنل چیمپین شپ میں کامیابی حاصل کی۔

نکہت زرین نے استنبول میں خواتین کی عالمی چمپیئن شپ کے فائنل میں فلائی ویٹ (52کلوگرام) زمرہ میں تھائی لینڈ کی جٹپانگ جوٹاماس پر 5-0 سے شاندار کامیابی حاصل کرتے ہوئے باوقار گولڈ میڈل جیتا

متعلقہ خبریں

Back to top button