بٹلہ ہاؤس انکاؤنٹر میں اریز خان پر فرد جرم ثابت _ 15 مئی کو سنائی جائے گی سزا

نئی دہلی _ 8 مارچ ( اردولیکس) دہلی کی ایک عدالت نے بٹلہ ہاؤس انکاؤنٹر کیس میں انڈین مجاہدین سے مبینہ تعلقات رکھنے والے اریز خان پر فرد جرم ثابت کرتے ہوئے مجرم قرار دیا ہے۔ عدالت نے کہا  کہ استغاثہ کے پیش کردہ شواہد سے یہ واضح ہوا ہے کہ ملزم قصوروار تھا۔ ستمبر 2008 میں ، قومی دارالحکومت میں بٹلہ ہاؤس انکاؤنٹر کے دوران ایریز خان نے دہلی کے اسپیشل پولیس سیل انسپکٹر موہن چند شرما کا قتل کردیاتھا۔ فائرنگ کے تبادلے کے بعد  اریز خان فرار ہوگیا تھا ۔ عدالت نے ملزمان کو تعزیرات ہند کی دفعہ 186 ، 333 ، 353 ، 302 ، 307 ، 174A ، 34 کے تحت سزا سنائی۔ عدالت نے ایریز خان کو مجرم قرار دے کر 15 مئی کو سزا کا سنانے کا اعلان کیا۔یہ انکاؤنٹر 19 ستمبر 2008 کو جنوبی دہلی کے بٹلہ  ہاؤس کے فلیٹ  میں دہلی پولیس کے خصوصی سیل اور دہشت گردوں کے درمیان ہوا تھا۔ یہ انکاؤنٹر قومی دارالحکومت میں ہوئے بم دھماکوں میں 26 افراد کی ہلاکت کے چھ دن بعد ہوا تھا ۔ انسپکٹر شرما ، جس پر دہشت گردوں سے تعلقات رکھنے کا الزام ہے ، اس انکاؤنٹر میں مارا گیا تھا۔جولائی 2013 میں ، ٹرائل کورٹ نے انڈین مجاہدین عسکریت پسند شہزاد احمد کو عمر قید کی سزا سنائی۔ انہوں نے اس فیصلے کو ہائی کورٹ میں چیلنج کیا ہے ، جو فی الحال زیر التوا ہے۔ انکاؤنٹر سے فرار ہونے والے اریز کو فروری 2018 میں نیپال میں گرفتار کیا گیا تھا۔